Monday, March 8, 2021
malegaontimes

بنگلہ دیش نے اپنی ہی عوام کی جاسوسی کے لئے اسرائیل سے آلات خریدے، جبکہ عوام کے اسرائیل سفر پر ہے پابندی

بنگلہ دیش کی جانب سے اسرائیل کے تیار کردہ ایسے جاسوسی آلات خریدنے کا انکشاف ہوا ہے کہ جس کی مدد سے وہ بیک وقت سیکڑوں افراد کے موبائل فون کی نگرانی کرسکتا ہے۔ رپورٹ کے مطابق دستیاب دستاویزات اور بیانات سے معلوم ہوا ہے کہ بنگلہ دیش کی فوج نے بنکاک میں مقیم ایجنٹ کو استعمال کرتے ہوئے اسرائیل سے سامان خریدا اور بنگلہ دیش کے فوجی انٹیلی جنس افسران کو اسرائیل کے انٹیلی جنس ماہرین نے ہنگری میں تربیت دی۔

خیال رہے کہ بنگلہ دیش، اسرائیل کو تسلیم نہیں کرتا اور ان کے مابین کوئی سفارتی تعلقات نہیں ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ ٹھیکیدار نے کسی بھی طرح سے یہ نہیں کہا کہ بنگلہ دیش کے لوگوں کو یہ معلوم ہونا چاہیے کہ یہ مصنوعات اسرائیل سے آئی ہیں کیونکہ بنگلہ دیش کے اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات نہیں ہیں اور اس کے ساتھ تجارت ممنوع ہے۔

بنگلہ دیش دنیا کی چوتھی بڑی مسلم آبادی کا ملک ہے اور وہ اپنے شہریوں کو فلسطینی اراضی پر فوجی قبضے کا حوالہ دیتے ہوئے اسرائیل کے سفر کی اجازت نہیں دیتا۔سرکاری طور پر بنگلہ دیش کا مؤقف ہے کہ وہ اس وقت تک اسرائیل کو تسلیم نہیں کرے گا جب تک ایک آزاد فلسطینی ریاست وجود میں نہیں آتی۔

error: Content is protected !!