Friday, February 26, 2021
malegaontimes

بھیونڈی اور ناسک میں کورونا کا خوف، ہسپتال بند

مالیگاؤں (نامہ نگار) کورونا کا عفریت مالیگاؤں میں بہت حد تک قابو میں ہے۔ خاص طور پر مسلم اکثریتی علاقوں میں۔ یہی وجہ ہے کہ بیرونِ شہر سے مسلسل مالیگاؤں میں کورونا کس طرح قابو میں کیا گیا؟ اس بارے میں فون پر تفصیلات لی جارہی ہیں اور مالیگاؤں پیٹرن کیا ہے؟ اس پر ابھی تک بحث و مباحثہ جاری ہے۔ دوسری طرف ناسک دیہی علاقوں سے لے کر بھیونڈی میں کورونا وائرس متاثرین کی تعداد میں زبردست اضافہ کی وجہ سے مالیگاؤں جیسی صورتحال پیدا ہوگئی ہے۔ شب برات کے بعد سے لے کر رمضان کے پہلے عشرے تک مالیگاؤں کی جو صورتحال تھی ، ہر طرف خوف و دہشت کا ماحول اور دواخانے بند رکھے گئے تھے ، وہی صورتحال ناسک اور بھیونڈی میں بھی ہے۔

ذرائع کے مطابق بھیونڈی میں دواخانے بند ہیں اور ڈاکٹرس مریضوں کا چیک اپ کرنے کی بجائے کورونا وائرس کے خوف سے خائف ہیں جس کی وجہ سے دیگر بیماریوں کے امراض سے متاثرہ مریضوں کو دقتوں کا سامنا ہے اور مالیگاؤں جیسی صورتحال ہے اور اموات کی شرح بڑھ جانے کا اندیشہ ہے۔ یہی وجہ ہے کہ بھیونڈی کارپوریشن مالیگاؤں پیٹرن کے طرز پر منصوبہ بندی کررہی ہے۔ فوری طور پر جنرل پریکٹس کرنے والے ڈاکٹروں کو دواخانہ کھولنے کے علاوہ علاج کرنے کی طرف توجہ دی جارہی ہے۔ بھیونڈی کارپوریشن نے تو ڈاکٹروں کی چھ ماہ کی خدمات کے لیے فی ماہ 85 ہزار روپیہ ماہانہ اعزازیہ اور 50 لاکھ تک بیمہ کرنے کی پیش کش بھی کردی ہے۔

Ad:


free-home-delivery


error: Content is protected !!