Thursday, March 4, 2021
malegaontimes

ملک میں برڈ فلو پھیلا، اب تک چار ریاستوں میں وائرس ملا

10 دن میں، ہندوستان کی کئی ریاستوں میں لاکھوں پرندے مردہ پائے گئے ہیں۔ کم سے کم چار ریاستوں ہماچل پردیش ، مدھیہ پردیش ، کیرالہ اور راجستھان نے برڈ فلو کی تصدیق کردی ہے ، جس کے بعد متعدد دیگر ریاستوں کو بھی اس کے انفیکشن کو پھیلنے سے روکنے کے لئے الرٹ کردیا گیا ہے۔ کیرالہ میں، پچھلے کچھ دنوں میں 12،000 بطخوں کی موت ہوگئی ہے ، جس کے بعد کرناٹک اور تمل ناڈو احتیاطی تدابیر اختیار کررہے ہیں۔ اسی دوران ہماچل میں ہزاروں پرندے مردہ پائے گئے ، جس کے بعد جموں وکشمیر اور ہریانہ نے اپنی اپنی ریاستوں میں نمونے چیک کرنا شروع کردیئے ہیں۔ برڈ فلو یا ایویئن فلو وائرس گھریلو پولٹری اور دیگر پرندوں اور جانوروں کی نسلوں کو متاثر کرسکتا ہے۔

کیرل میں کوٹئیم کے متعدد حصوں میں H5N8 ایوی انفلوئنزا کے تناؤ کے بعد ، یہاں قریب 36،000 پرندوں کے مارے جانے کا امکان ہے۔ یہ کام دو اضلاع میں پہلے ہی شروع کیا جا چکا ہے۔ دو اضلاع میں کنٹرول روم اور کوئیک رسپانس ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں۔ وزیر جنگلات کے راجو نے اس ہفتے بتایا تھا کہ پولٹری مالکان کو معاوضے سے متعلق وزیر اعلی سے بات چیت کے بعد فیصلہ کیا جائے گا۔

ہریانہ کے پنچکولہ میں پچھلے 10 دنوں میں چار لاکھ پولٹری پرندوں کی موت ہوگئی ہے۔ تاہم ، ریاست نے ابھی تک فلو کی تصدیق نہیں کی ہے۔ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ اس کی تحقیقات کی جارہی ہیں۔ہماچل پردیش نے منگل کو ریاست میں ایوین فلو کی تصدیق کی ہے۔ یہاں ہجرت کرنے والے گیز کے تقریبا 27000 پرندے مردہ پائے گئے۔

مدھیہ پردیش میں 300 کووں کی موت سے برڈ فلو کا خطرہ ہے۔ نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہائی سیکیورٹی اینیمل امراض (این آئی ایچ ایس اے ڈی) نے اندور اور مندسور سے لیئے گئے کچھ نمونوں میں H5N8 کی موجودگی کی تصدیق کردی ہے۔

اندور میں کووں کی اچانک موت کے پیش نظر ، ایک کنٹرول روم تشکیل دیا گیا ہے اور تیز رفتار رسپانس ٹیم حرکت میں آگئی ہے۔ کووڈ سے لڑنے والا محکمہ صحت یہاں گھر گھر جاکر میڈیکل چیک اپ کررہا ہے۔

نیوز ایجنسی پی ٹی آئی نے راجستھان کے جانور پالنے والے وزیر لال چند کٹاریہ کے حوالے سے بتایا ہے کہ یہ وائرس راجستھان کے جھالاور ، کوٹا اور باران میں پرندوں میں پایا گیا ہے۔ منگل تک یہاں کے 16 اضلاع میں کل 625 پرندے مر چکے ہیں۔

error: Content is protected !!