Thursday, February 25, 2021
malegaontimes

کورونا ویکسین کی ریس میں سب سے آگے آکسفورڈ آسٹرا زینیکا : ڈبلیو ایچ او

دنیا بھر میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد ایک کروڑ سے تجاوز کرگئی ہے۔ دنیا کے بہت سارے ممالک اور ان کے بہت سارے صحت و تحقیقی ادارے بھی اس خطرناک وبا کا علاج کرنے کے لیے ویکسین کی تلاش میں مصروف ہیں۔ عالمی ادارہ صحت کے مطابق آکسفورڈ یونیورسٹی علاج کے لیے جس ویکسین پر کام کررہی ہے وہ کورونا وائرس کے خاتمے میں سب سے آگے ہے۔ ڈبلیو ایچ او کے چیف سائنسداں سومیا سوامیاتھن نے کہا ہے کہ “وہ جس مرحلے پر ہے اور وہ جس قدر ترقی یافتہ ہے، مجھے لگتا ہے کہ وہ آگے جارہے ہیں۔”

آکسفورڈ اور آسٹرا زینیکا ویکسین کلینکل ٹرائل کے آخری مراحل میں ہے۔ اس مرحلے تک پہنچنے والی دنیا کی پہلی ویکسین ہے۔ اسی کے ساتھ ہی موڈیرنا انک آف امریکہ نے اپنی ویکسین ایم آر این اے 1273- کی آزمائش کا دوسرا مرحلہ شروع کردیا ہے۔ موڈرنا انکا رپوریٹڈ بھی تیز رفتاری سے کام کررہی ہے۔ لیکن اس وقت آسٹرا زینیکا کے عالمی اثرات کے زیادہ امکان ہیں۔

اس بارے میں سوامیا امیاتھن نے کہا کہ ‘ہم جانتے ہیں کہ موڈرنہ کی ویکسین بھی شاید جولائی میں تیسرے مرحلے کے کلینکل ٹرائل تک پہنچی ہے ۔لہٰذا وہ زیادہ پیچھے نہیں ہیں۔ لیکن آسٹرا زینیکا کی عالمی سطح بہت زیادہ ہے۔ ‘


free-home-delivery


error: Content is protected !!