Friday, February 26, 2021
malegaontimes

لاک ڈاؤن کے درمیان سائبر کرائم میں 90 فیصد اضافہ

کورونا وائرس کے انفیکشن کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے لاک ڈاؤن لاگو کیا گیا تھا۔ لیکن اس دوران سائبر کرائم کرنے والوں کی چاندی ہوگئی ہے۔  لاک ڈاؤن میں بہت سے لوگوں نے آئن لائن خرید و فروخت کا راستہ اپنایا۔ اور سائبر مجرمان نے اسی سے فائدہ اٹھایا۔ ذرائع کے مطابق لاک ڈاؤن کے دوران سائبر کرائم کی شکایات میں 90 فیصد سے زیادہ اضافہ ہوا ہے۔

دہلی میں ڈیبیٹ اور کریڈٹ کارڈ، ای والٹ ، کالنگ ، فشنگ اور انٹرنیٹ بینکنگ سے متعلق دھوکہ دہی میں کافی اضافہ ہوا ہے۔ پولیس کو مالی دھوکہ دہی کی 50 فیصد سے زیادہ شکایات موصول ہوئی ہیں۔ جب کہ آئن لائن دھوکہ دہی کے متعلق دوسرے 20 فیصد معاملات بھی پولیس کے سامنے آچکے ہیں۔

دھوکہ بازوں نے لاک ڈاؤن میں بھی سرکاری اسکیم کا فائدہ اٹھانے کے نام پر لوگوں کو لاکھوں روپے کا نقصان پہنچایا ہے۔ پولیس کو موصول ہونے والی 60 فیصد شکایات  بھی آن لائن ہی موصول ہوئی ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ لاک ڈاؤن کے دوران لوگوں نے پولیس اسٹیشن جانے کی بجائے فون پر رابطہ کیا اور ای میل پر شکایات بھیجیں۔

دہلی پولیس نے واضح طور پر کہا ہے کہ عوام کو کسی بھی مشکوک میل کو کھولنے سے گریز کرنا چاہیے اور بغیر کسی تفتیش کے سوشل میڈیا پیغام رسانی ایپ سمیت دیگر آن لائن ذرائع سے ملی معلومات اور لنکس پر بھروسہ نہیں کرنا چاہیے۔ پولیس نے تنبیہہ کی ہے کہ سوشل میڈیا اور آن لائن بینکنگ کے لیے مضبوط پاس ورڈ استعمال کریں۔ کسی نا معلوم شخص کے ساتھ فون پر ذاتی تفصیلات شیئر نہ کریں۔ نیز وقتاً فوقتاً اپنا اے ٹی ایم پاس ورڈ تبدیل کرتے رہیں۔


free-home-delivery


error: Content is protected !!