Wednesday, March 3, 2021
malegaontimes

پہاڑوں میں برف باری نے پریشانی میں اضافہ کیا، ہماچل میں پھنسے 300 مسافر

محکمہ موسمیات کی وارننگ کے باوجود مسافر ہمالیہ کے علاقوں میں سفر جاری رکھے ہوئے ہیں۔ اس کے نتیجے میں مسافر برف باری اور جام میں پھنس رہے ہیں۔ تازہ واقعہ ہماچل پردیش کا ہے جہاں سیکڑوں مسافر برف باری کی وجہ سے پھنس گئے ہیں۔ ایک عہدیدار نے بتایا کہ اتوار کے روز ہماچل پولیس نے روہتنگ کے قریب ‘اٹل سرنگ’ میں پھنسے ہوئے 300 کے قریب مسافروں کو نکالا گیا۔ اسی کے ساتھ ہی جموں سری نگر قومی شاہراہ پر شدید برف باری کے باعث ٹریفک بھی درہم برہم ہوگیا ہے۔

ایس پی نے بتایا کہ “کچھ مسافر ہفتے کی صبح اٹل سرنگ عبور کر چکے تھے لیکن برف باری کے باعث انہیں لاہول میں ٹھہرنے کے لئے کوئی جگہ نہیں مل پائی۔ جب وہ منالی کی طرف واپس جانے لگے تو وہ برف باری کے سبب درمیان میں پھنس گئے۔

کلو ایس پی نے مزید بتایا کہ لاہول پولیس اسٹیشن ، کلو پولیس سے مستقل رابطے میں ہے ، پھنسے مسافروں کو نکالنے کے لئے ہفتے کی شام گاڑیوں کو سرنگ کے لئے بھیجا گیا تھا۔ تاہم یہ گاڑیاں سڑک پر پھنس گئیں کیونکہ سڑک برف سے ڈھکی ہوئی تھی اور بہت پھسلتی تھی۔

حکام کے مطابق ان مسافروں کو بچانے کے لئے 70 گاڑیاں بھیجی گئیں ہیں جن میں ایک 48 سیٹوں والی بس اور 24 سیٹر پولیس بس شامل ہے۔ اس کے علاوہ پولیس کوئیک ری ایکشن ٹیم کو فرنٹ میں بھیجا گیا تاکہ مسافروں کو کسی قسم کا حادثہ پیش نہ آئے۔

کلو کے ایس پی نے بتایا کہ اس امدادی کارروائی میں منالی کے ڈی ایس پی اور ایس ایچ او دونوں شامل تھے ، جس میں بارڈر روڈس آرگنائزیشن کے عہدیدار بھی شامل ہوئے۔ یہ ریسکیو آپریشن ہفتے کی شام کو شروع ہوا جو آدھی رات کے بعد بھی جاری رہا۔ تمام مسافروں بازیاب کرایا گیا ، جس کے بعد انہیں منالی کے محفوظ مقامات پر لے جایا گیا۔ کلو ایس پی نے بتایا کہ منالی ایس ایچ او کی سربراہی میں پولیس کی ایک ٹیم راستوں پر نظر رکھے ہوئے ہے۔

محکمہ موسمیات کی پیش گوئی کے مطابق آئندہ چند روز میں برف باری ہوگی۔ محکمہ موسمیات نے منگل کو ہی خراب موسم کی وارننگ جاری کی تھی۔ محکمہ موسمیات نے پیش گوئی کی تھی کہ 3 جنوری سے 5 جنوری اور 8 کے درمیان ہماچل پردیش کے وسطی اور اعلی حصوں میں بارش کے ساتھ ساتھ برفباری کا بھی امکان ہے۔

error: Content is protected !!