Wednesday, March 3, 2021
malegaontimes

آئی سی ایم آر کا 15 اگست تک کورونا ویکسین بنانے کا منصوبہ، عالمی قواعد کے مطابق کررہا ہے کام

آئی سی ایم آر کے 15 اگست تک کورونا وائرس ویکسین لانے کے منصوبے کی اطلاعات کے بعد ماہرین نے منشیات بنانے کے عمل کو روکنے کی تجویز دی ہے۔ آئی سی ایم آر نے 4 جولائی کو کہا کہ ویکسین بنانے کے لیے وہ عالمی سطح پر قبول کردہ تمام قواعد کے مطابق کام کررہا ہے۔ انڈین کونسل آف میڈیکل ریسرچ (آئی سی ایم آر) نے کہا کہ اس کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر نلارام بھارگوا کے کلینکل ٹرائل سائٹس کے سرکردہ تفتیش کاروں کو لکھے گئے خط کا مقصد غیر ضروری رید ٹیپ کو کم کرنا اور بغیر کسی ضروری طریقہ کار کو چھوڑے شرکاء کی بھرتی میں اضافہ کرنا ہے۔

2 جولائی کو بھارگوا نے منتخب میڈیکل اداروں اور اسپتالوں کے پرنسپل تفتیش کاروں سے کہا ہے کہ وہ جلد ہی ہائیوٹیک کے ساتھ شراکت میں تیار کی جانے والی ویکسین ‘کووکسن’ کے ابتدائی طور پر انسان کی جانچ کی منظوری دیں۔ انہوں نے کہا ہے کہ دنیا بھر میں تیار کی جانے والی دیگر تمام ویکسینوں پر بھی کام تیز کیا گیا ہے۔ آئی سی ایم آر نے بتایا کہ بھارت کے ڈرگ کنٹرولر جنرل نے کلینیکل ٹرائلز کے پچھلے مطالعے سے دستیاب اعداد و شمار کی گہرائی سے جانچ پڑتال پر مبنی ‘کووکسن’ کے انسانی آزمائش کے مراحل 1 اور 2 کی منظوری دے دی ہے۔

آئی سی ایم آر نے ایک بیان میں کہا کہ مقصد یہ ہے کہ آبادی پر مبنی ٹیسٹ بغیر کسی تاخیر کے جلد از جلد ان اقدامات کو مکمل کیا جائے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ صحت عامہ کے مفاد میں آئی سی ایم آر کے لیے ایک با اثر دیسی ویکسین کے کلینیکل ٹرائلز کو تیز کرنا اہم ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئی سی ایم آر عمل مکمل طور پر ویکسین بنانے کے عمل کو تیز کرنے کے لیے عالمی سطح پر قبول کردہ قواعد کے مطابق ہے جس میں انسانوں اور جانوروں  پر آزمائش متوازی چل سکتی ہے۔


malegaontimes ads

error: Content is protected !!