Friday, February 26, 2021
malegaontimes

بھارت اور چین تناؤ کم کرنے پر زور، چین نے کہا بھارت کا کوئی فوجی ہماری حراست میں نہیں

ہندوستان اور چین کے درمیان کشیدگی بڑھتی ہی جاری ہے۔ ادھر چین کا کہنا ہے کہ فی الحال اس نے کسی بھی ہندوستانی فوجی کو حراست میں نہیں لیا ہے۔ ساتھ ہی چین کا کہنا ہے کہ ہندوستان کے ساتھ تناؤ کو کم کرنے کی کوشش پر زور دیا جارہاہے۔ وادی گالان میں ہندوستان اور چینی فوجیوں کے مابین پر تشدد تصادم کے بعد چین کے چینی فوج کے توسط سے کچھ ہندوستانی فوجیوں کی گرفتاری کی خبر پر وضاحت پیش کی ہے۔ چین کا کہنا ہے کہ فی الحال اس کی تحویل میں کوئی ہندوستانی فوجی نہیں ہے۔

وادی گالان میں ہندوستانی اور چینی فوجیوں کے درمیانی تناؤ پر سوالوں کے جواب میں چینی وزارت خارجہ کے ترجمان ژاؤ لیجیان نے کہا کہ “جہاں تک میں جانتا ہوں، اس وقت چین نے کسی بھی ہندوستانی فوجی کو گرفتار نہیں کیا ہے” ۔ اسی دران جب ان سے یہ پوچھا گیا کہ کیا ہندوستان نے ایک چینی فوجی کو حراست میں لیا ہے تو اس کے جواب میں انھوں نے کہا کہ” چین اور بھارت سفارتی اور فوجی چینلز کے ذریعے معاملات کو حل کرنے کے لیے بات چیت میں مصروف ہیں۔ میرے پاس فی الحال اس کے لیے کوئی معلومات نہیں ہیں۔

میجر جنرل کی سطح کے مذاکرات کے بعد جمعرات کی شام چینی فوج کے ذریعہ 10 ہندوستانی فوجیوں کو رہا کیا گیا۔ یعنی اس جھڑپ کے تین دن بعد اسیران فوجیوں میں دو فوجی افسر بھی شامل تھے۔ اسی مابین 10 بھارتی فوجیوں کی واپسی کے بعد بھی وادی گالان میں صورتحال کشیدہ ہے۔ گالان وادی اور پیانگونگ جھیل کے قریب دونوں ممالک سے اضافی دستے تعینات کردیے گئے ہیں۔

Ad:


free-home-delivery


error: Content is protected !!