Wednesday, March 3, 2021
malegaontimes

ایران اور امریکہ کے بیچ خلیج فارس میں تناؤ بڑھا، کمانڈر قاسم سلیمانی کی پہلی برسی پر حالات کشیدہ

تقریبا ایک سال قبل ، امریکہ نے ایران کے فوجی کمانڈر قاسم سلیمانی کو ہلاک کیا تھا۔ اس کے نتیجے میں دونوں ممالک کے مابین تناؤ میں گہرا پن پڑ گیا اور اب ایک بار پھر خطے میں فوجی محاذ آرائی کی صورتحال دیکھنے کو مل رہی ہے۔ ایران نے الزام لگایا ہے کہ امریکہ نے اپنے ایٹمی بمباروں کو خلیج فارس بھیج دیا ہے ، جبکہ ڈونالڈ ٹرمپ انتظامیہ کا دعویٰ ہے کہ ایرانی بحریہ گذشتہ 48 گھنٹوں میں مزید سرگرم ہوگئی ہے۔

دوسری جانب اسرائیلی میڈیا نے امریکی ذرائع کے حوالے سے دعوی کیا ہے کہ اسرائیل اور سعودی عرب ٹرمپ کو اپنی میعاد ختم ہونے سے قبل ایران کے ایٹمی یتھیارکو گرانے کے لئے اکسارہے ہیں۔

سی این این کی رپورٹ کے مطابق ، امریکہ کو خدشہ ہے کہ ایران سلیمانی کی برسی 3 جنوری کو امریکہ کو نشانہ بنانے کی کوشش کرے گا۔ نہ صرف یہ ، بلکہ سیاسی تجزیہ کاروں کو یہ خوف بھی لاحق ہے کہ ٹرمپ ، جو بائیڈن کی صدارتی انتخاب میں کامیابی سے پریشان تھے ، ایران کے ساتھ اس تنازعہ کو مزید پیچیدہ بنانے کی کوشش کر سکتے ہیں تاکہ آنے والی حکومت کے لئے مشکلات پیدا ہوسکیں۔

درحقیقت ، بائیڈن کا منصوبہ یہ ہے کہ ٹرمپ نے ایران پر جو دباؤ ڈالا تھا اسے کم کیا جائے ، اس کے ساتھ بات چیت کی جائے ، اور ایران کو معاہدے پر واپس لایا جائے۔ ایسی صورتحال میں ماہرین کا خیال ہے کہ ایران کوئی بھی قدم سوچ سمجھ کر کرے گا تاکہ بائیڈن پر عائد پابندیوں کو نرم کیا جاسکے۔

error: Content is protected !!