Monday, March 8, 2021
malegaontimes

آسام شہریت معاملہ: جمعیۃعلماء ہند کی پٹیشن کی وجہ سے سپریم کورٹ اسٹیٹ کوآرڈینیٹر سے جواب مانگا

آسام کے نئے اسٹیٹ کوآرڈینیٹر ہتیش دیو شرما کے ذریعہ این آرسی کولے کر جاری کئے گئے ایک متنازعہ نوٹیفیکیشن کے خلاف جمعیۃ علماء ہند کی طرف سے داخل کی گئی پٹیشن پر سپریم کورٹ کی چیف جسٹس کی سربراہی والی بینچ نے نوٹس جاری کرکے اسٹیٹ کوآرڈینیٹر سے تحریری جواب طلب کیا ہے اور 4 ہفتے کے اندران سے یہ بتانے کو کہا گیا ہے کہ انہوں نے اجازت لئے بغیر اس طرح کا سرکلرکیوں جاری کیا؟

ضابطہ کے مطابق سرکلرجاری کرنے سے پہلے آپ کو این آرسی مانیٹرنگ پینل سے اجازت لینی چاہئے تھی۔واضح ہوکہ یہ نوٹیفیکشن این آرسی سے ان لوگوں کو نکال باہر کرنے کے لئے جاری کیا گیا ہے، جو مشتبہ ہیں یا ڈی ووٹر ہیں یا پھر فارن ٹریبونل نے جن کے بارے میں کوئی فیصلہ نہیں کیا ہے، نوٹیفیکشن میں ریاست کے تمام اضلاع کے رجسٹرارآف سٹیزن رجسٹریشن سے واضح طور پر کہا گیا ہے کہ وہ نہ صرف ایسے لوگوں بلکہ ان کے اہل خانہ کے نام بھی این آرسی سے ہٹادیں، پٹیشن وکیل آن ریکارڈ فضیل ایوبی کے توسط سے داخل کی گئی تھی اورگزشتہ روز سینئر ایڈوکیٹ کپل سبل جرح کیلئے جمعیۃ علماء ہند کی طرف سے عدالت میں موجود تھے

error: Content is protected !!