Saturday, February 27, 2021
malegaontimes

عیدالاضحیٰ کے موقع پر قربانی ادا کرنے کی اجازت دی جائے، جمیعت علما کا مکتوب

مسلمانوں کا اہم مذہبی تہوار عیدالاضحیٰ کو شرعی طور پر ادا کرنے کی اجازت دیئے جانے کے تعلق سے جمعیت علماء مہاراشٹر (ارشد مدنی) نے چیف منسٹر آف مہاراشٹر ادھو ٹھاکرے ، ہوم منسٹر انیل دیشمکھ ، وزیر اقلیتی بہودنواب ملک اور مشترآف ممبئی میونسپل کارپوریشن کو خطوط  روانہ کئے ہیں ۔

 جمعیۃ علماء مہاراشٹر کے دفتر سے جاری بیان کے مطابق جمعیت علماء قانونی امداد کمیٹی کے سر براگلزار اعظمی نے وزیر اعلی مہاراشٹر ادھو ٹھاکرے  سے درخواست کی ہیکہ وہ دیونار سلاٹر ہاؤس  سمیت ریاست کے عارضی بدن خانوں میں عیدالضحی کے موقع پر مسلمانوں کو بکرے اور بڑے کے جانوروں ( اجازت شدہ ) کی قربانی کرنے کی اجازت دیں،  نیز وہ اس تعلق سے متعلق محکموں کے افسران کو حکم جاری کریں کہ قربانی کے لئے سلاٹر ہاؤس کو تیار کریں جیسا کہ حسب سابق ہوتا رہا ہے ۔

 مکتوب میں لکھا ہے کہ حال ہی میں سپریم کورٹ آف انڈیا نے جگناتھ یاترا کے لیئے مشروط اجازت دی ہے لہذا اگر حکومت کو لگتا ہیکہ  کرو نا وبا  کی وجہ سے قربانی کی اجازت دینے سے مسائل بڑھ سکتے ہیں تو وہ جگناتھ یاترا کی طرز پرمسلمانوں کو قربانی کی اجازت دے سکتی ہے ۔ مکتوب میں مزید لکھا کہ اسلام میں قربانی کا کوئی بدل نہیں ہے ، جس بھی مسلمان پر قربانی واجب ہے اسے ہر حال میں فریضہ ادا کرتا ہوگا ۔

ان سب باتوں کو مدنظر رکھتے ہوئے مسلمانوں کو عیدالاضحیٰ کے موقع پرحسب سابق قربانی کرنے کی اجازت دی جائے مکتوب میں بھی لکھا کہ یہ روایت رہی ہیکہ عیدالاضحیٰ سے قبل وزیر اعلیٰ مسلم نمائندوں کی میٹنگ طلب کر کے بی ایم سی اور حکومت کے نمائندوں کی موجودگی میں ان کے مسائل حل کیا کرتے تھے ، لہٰذا وزیر علیٰ سے درخواست ہیکہ وہ مسلم نمائندوں کی میٹنگ طلب کر کے قربانی کا فریضہ انجام دیئے جانے کے لیے راہ ہموار کریں ۔

اس ضمن میں گلزار اعظمی نے بتایا کہ انہوں نے بی ایم سی اور منترالیہ سے اپنے ذرائع سے معلومات حاصل کی تو انہیں پتہ چلا کہ عیدالاضحیٰ پر قربانی کو لیکر ابھی تک حکومت کی جانب سے کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا ہے اور اس تعلق سے ممبئی  کے سب سے بڑے مذنخ خاننہ دیونار میں کسی بھی طرح کی تیاری شروع نہیں ہوئی ہے جس کی وجہ سے مسلمانوں میں بےچینی بڑھ رہی ہے ۔ لہذا انہوں نے وزیراعلی مہاراشٹر سمیت دیگر وزراء اور کمشنر آف ممبئی  کارپوریشن کو مکتوب روانہ کیا ہے ۔


error: Content is protected !!