Friday, March 5, 2021
malegaontimes

بھارت کے سامنے جھکا پاکستان، کلبھوشن جادھو کی اپیل دائر کرنے کا دوسرا موقع

پاکستان میں قید کلبھوشن جادھو کے معاملے میں بھارت کے سخت موقف کے بعد اب معاملہ پاکستان کی طرف مڑگیا ہے۔ پاکستان کی وزارت خارجہ نے بدھ کے آخر میں کلبھوشن جادھو کو سزائے موت کے خلاف اپیل کی اجازت دی۔ پاکستان نے دعویٰ کیا کہ جادھو کو یہ اپیل دائر کرنے کے لیے خصوصی حکم لانا تھا۔ بھارت نے پاکستان کے اس پورے دعوے کو سوانگ قرار دیا ہے۔

پاکستان کی وزارت خارجہ کے ڈائریکٹر جنرل برائے جنوبی ایشیاء امور جنرل زاہد حافظ اور ایڈیشنل اٹارنی جنرل احمد عرفان نے دعویٰ کیا کہ پاکستان نے بین الاقوامی عدالت انصاف کے فیصلے کے مطابق تمام ضروری اقدامات اٹھائے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اپیل اور نظر ثانی کی درخواست اسلام آباد میں جادھو یا ان کے قانونی نمائندے یا ہندوستان کے کونسلر آفیسر کے ذریعہ دائر کی جاسکتی ہے۔

اس سے قبل پاکستان نے کہا تھا کہ سائے موت کا سامنا کرنے والے ایک ہندوستانی قیدی کلبھوشن جادھو نے فوجی عدالت کے ذریعہ سزا کے خلاف اسلام آباد ہائی کورٹ میں اپیل دائر کرنے سے انکار کردیا ہے۔ تاہم بھارت نے پاکستان کے اس دعوے کو طنز قرار دیا ہے۔ ہندوستانی بحریہ کے ایک ریٹائرڈ افسر جادھو (50) کو پاکستانی فوجی عدالت نے اپریل 2017 میں جاسوسی اور دہشت گردی کے الزامات میں سزائے موت سنائی تھی۔

ہندوستانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ جادھو کو جھوٹے مقدمے کی سماعت کے ذریعے سزائے موت سنائی گئی ۔ وہ پاکستانی فوج کی تحویل میں ہے۔ ان پر واضح دباؤ ڈالا گیا تھا کہ وہ از سر نو غور کی درخواست دائر نہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان نے ان تک بلا تعطل رسائی کا مطالبہ کیا ہے تاکہ ایک آرڈیننس کے تحت دستیاب اختیارات پر ان سے بات کی جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ آرڈیننس کے تحت دستیاب ناکافی اختیارات کو بھی دور کرنے کی شرمناک کوشش کے طور پر پاکستان پر فطری طور پر ان پر ڈباؤ ڈالا جاتا ہے تاکہ وہ بین الاقوامی عدالت انصاف کے فیصلے پر عمل در آمد کے حق کا مطالبہ نہ کریں۔


free-home-delivery


malegaontimes ads

error: Content is protected !!