Saturday, February 27, 2021
malegaontimes

مجلس یوپی میں ایک بار پھر پنچایت انتخابات لڑے گی

اتر پردیش کی سیاسی نبض کو پکڑنے کے لئے آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) اور اوم پرکاش کی بھارتیہ سماج پارٹی یو پی میں آئندہ پنچایت انتخابات لڑ سکتی ہے۔ اوم پرکاش راج بھر نے بدھ کے روز کہا کہ سنکلپ مورچہ کے ساتھ مجلس کے انتخابی میدان میں اترنے کا امکان ہے۔

اے آئی ایم آئی ایم نے، یوپی میں پنچایت انتخابات کے لئے 2015 میں بھی حصہ لیا تھا، لیکن پانچ سالوں میں ریاست کا سیاسی مزاج کافی حد تک بدل گیا ہے۔ مجلس سمیت اوم پرکاش راج بھر کی سربراہی میں چھوٹی اور علاقائی جماعتوں کی شراکت کی قرارداد تشکیل دی گئی ہے۔ ایسی صورتحال میں، یوپی کے پنچایت انتخابات کو سنکلپ مورچہ کا ٹیسٹ سمجھا جارہا ہے، اسی بنا پر اویسی اور راج بھر 2022 کے اسمبلی انتخابات کی بنیاد رکھیں گے۔

ہم آپ کو بتادیں کہ اسد الدین اویسی نے پانچ سال قبل پنچایت انتخابات کے ذریعے یوپی کی سیاست میں قدم رکھا تھا۔ گذشتہ پنچایت انتخابات میں اے آئی ایم آئی ایم نے ریاست کے 18 اضلاع میں 50 ضلع پنچایت کی نشستوں کے لئے امیدوار کھڑے کیے تھے۔ 2015 کے ضلعی پنچایت انتخابات میں اسد الدین اویسی کی پارٹی اے آئی ایم آئی ایم نے چار نشستیں حاصل کی تھی، جبکہ 15 نشستوں پر دوسرے نمبر پر رہی۔ مجلس نے اعظم گڑھ اور مظفر نگر میں ایک ایک سیٹ اور بلرام پور ضلع میں 2 ضلع پنچایت نشستوں پر کامیابی حاصل کی تھی۔

error: Content is protected !!