Wednesday, March 3, 2021
malegaontimes

شہر مالیگاؤں کے 60 سال سے زیادہ عمر کے 91 شہری کورونا کے خلاف جنگ میں کامیاب

مالیگاؤں : لاک ڈاؤن کے دنوں میں جب کورونا وائرس نے ناسک ضلع کے اہم شہر مالیگاؤں کو اپنی لپیٹ میں لیا اُس دوران سینکڑوں متاثرین ایسے تھے جن کی عمریں 60 سال سے زیادہ تھی۔ انہیں کورونا کے علاوہ دوسرے جان لیوا امراض بھی لاحق تھے۔ چنانچہ فوری طبی امداد کی فراہمی کے سبب جان بچانا ممکن ہوسکا۔ کورونا کو شکست دینے والے معمر شہریوں میں 58 مرد اور 33 خواتین شامل ہیں۔ اس مرحلے میں سرکاری انتظامیہ طبی عملہ اور پولیس دستے نے زبردست طریقے سے اپنی ذمہ داریاں نبھائیں۔

            ڈاکٹر اننت پوار (ریسیڈینشیل میڈیکل آفیسر) نے اخباری نمائندوں سے گفتگو کے دوران کہا کہ ” عام شہریوں کے علاوہ ضعیف اور عمر دراز شہریوں کی بڑی تعداد کورونا سے متاثر ہوئی۔ ذیابیطس ، امراض قلب اور فشار خون جیسے پیچیدہ امراض میں مبتلا معمر شہری کورونا کے حملے سے محفوظ نہیں رہ سکے تھے ۔ معمر شہریوں کو صحت مند ہونے میں اس لیے بھی آسانی رہی کہ انہوں نے مرض کو پوشیدہ نہیں رکھا۔ کووڈ متاثرین کے لیے جاری اسپتالوں میں علاج و معالجے کے لیے فوراً پہنچے۔ انہیں لازمی طبی امداد فراہم کی گئی۔ مختلف ٹیسٹ کے ذریعے انہیں دوائیاں کھانے کے لیے دی گئیں۔ طبی عملے نے نگرانی کرنے اور دوسری ضروریات کی تکمیل میں کوئی کسر باقی نہیں رکھی۔

            مالیگاؤں کے حالات ناسازگار ہونے پر این سی پی سپریمو شرد پوار اور وزیر اعلیٰ اُدھو ٹھاکرے نے ڈاکٹر ظہیر قاضی (صدر انجمن اسلام، ممبئی) سے رابطہ کرتے ہوئے صورتحال سے نمٹنے کے لیے انتظامیہ کے دست و باز تیار کرنے کی بابت تبادلہ خیال کیا تھا۔ تبدیل ہوتی صورتحال پر ڈاکٹر ظہیر قاضی نے کہا کہ “مالیگاؤں کے شہریوں نے سرکاری انتظامیہ کا صد فیصد تعاون کیا جس کی وجہ سے حالات خوشگوار ہوئے ہیں۔ ” انہوں نے مزید کہا کہ “یہ بہت ہی خوشگوار اطلاع ہے کہ مالیگاؤں میں متاثرین کی تعداد میں کمی واقع ہوئی ہے، صحت یاب ہونے والوں کی شر ح بڑھی اور بروقت علاج کے لیے اسپتالوں میں پہنچنے کا رجحان بھی فروغ پارہا ہے۔”

 معلوم ہوکہ 7 جون کو ناسک دورے پر پہنچے ریاستی وزیر محصول بالا صاحب تھورات نے “مالیگاؤں پیٹرن” کو ریاست مہاراشٹر کے دوسرے شہروں کے لیے ماڈل قرار دیا تھا۔


error: Content is protected !!