Thursday, March 4, 2021
malegaontimes

پب جی نہ کھیل پانے کی وجہ سے مایوس طالب علم، پنکھے سے لٹک کر دے دی جان

مغربی بنگال کے ضلع نادیہ میں ایک 21 سالہ طالب علم نے مبینہ طور پر آن لائن گیمز نے کھیل پانے کی وجہ سے خود کشی کرلی۔ پولیس نے اتوار کے روز بتایا کہ آئی ٹی آئی کے طالب علم پریتم ہالڈر نے چکدہ پولیس اسٹیشن کے علاقے پوربہ لال پور میں اپنے گھر میں خودکشی کرلی۔

اس کی والدہ رتنا نے بتایا کہ ہالڈر جمعہ کی صبح ناشتہ کرنے کے بعد اپنے کمرے میں گیا تھا۔ اس کی ماں نے بتایا کہ جب وہ دوپہر کا کھانے کے لیے اسے بلانے گئی تو اس کا کمرہ اندر سے بند تھا۔ بار بار دستک دینے کے بعد بھی دروازہ نہیں کھولا تو ماں نے پڑوسیوں کو بلایا۔ جب وہ دروازہ توڑ کر کمرے میں داخل ہوئے تو انہوں نے اسے پنکھے سے لٹکا ہوا پایا۔

پولیس نے بتایا کہ انھوں نے غیر فطری موت کا مقدمہ درج کرلیا ہے۔ رتنا نے دعویٰ کیا کہ ان کا بیٹا پب جی گیم نہ کھیل پانے کی وجہ سے بد ظن ہوگیا تھا۔ پولیس نے خاندان والوں سے بات کرنے کے بعد یہی کہا کہ ان کا خیال ہے کہ پریتم نے موبائیل گیمز نہ کھیل پانے کی وجہ سے اپنی جان دے دی۔

واضح ہوکہ بدھ کے روز حکومت نے چین کے 118 ایپس پر پابندی عائد کردی ہے۔ جن میں پب جی گیم بھی شامل ہے۔ پچھلے کچھ سالوں میں 18 سے زیادہ نوجوان پب جی گیم کے شوق اور لت کی وجہ سے اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔


automobile-ad


error: Content is protected !!