Saturday, March 6, 2021
malegaontimes

مسلم کارپوریٹر، اسٹینڈنگ چیئرمین اور میئر وغیرہ کو 14 دنوں کے لیے کوارنٹائن کیا جائے

میئر، میونسپل ذمہ داران و کمشنر وغیرہ کو کرونا پھیلانے کے الزام میں گرفتار کرتے ہوئے سسپینڈ کیا جائے. رضوان بیٹری والا

کل میونسپل کارپوریشن کی ماہانہ جنرل بورڈ میٹنگ کا انعقاد میئر کی صدارت میں بالاجی دانس ٹھرے بھاٹہ، ایم جی پیٹرول پمپ کے سامنے کیا گیا. یہ دانس ندی کے اس پار اس علاقے میں واقع ہے جہاں کے ساکنین اور کارپوریٹروں نے ہم مسلمانوں کا بائیکاٹ کرتے ہوئے ہم سے میل جول ختم کرنے کے لیے ان کے علاقوں میں جانے کے سارے راستے مسدود کر دیے تھے. سبزی مارکیٹ سے لے کر دانہ مارکیٹ تک سبھی مقامات پر ہمارا داخلہ ممنوع قرار دیا گیا تھا. یہاں تک کہ دودھ فروشی کے لیے گاؤں میں آنے والے دودھ والوں کو بھی وارننگ دے کر کہا گیا کہ اگر مالیگاؤں گئے تو واپس نہ آنا. ایسے سنگین اور نہ مساعد حالات میں جبکہ ندی کے اس پار کے علاقے میں روزانہ کورونا کا کوئی نہ کوئی مریض سامنے آ رہا تھا اس کے باوجود تمام تر احتیاطی تدابیر کو بالائے طاق رکھتے ہوئے ماہانہ جنرل بورڈ میٹنگ کا انعقاد کرنا انتہائی سنگین نوعیت کا جرم قرار دیا جا سکتا ہے. اس میٹنگ کے زمہ داران کمشنر و میئر کے اختلاف گناہ درج کرتے ہوئے انہیں 14 دنوں کے لیے کوارنٹائن کیا جائے نیز کوارنٹائن سے نکلنے کے بعد انہیں عہدوں سے مسترد کیا جائے کیونکہ ان سب نے مل کر حکومتی جی آر( G R) کا کھلے عام مذاق اڑایا ہے. اب رہا سوال مسلم کارپوریٹر اور اسٹینڈنگ چئیرمین اور ہر ناانصافی پر واویلا مچانے والوں کا تو ہم ان سے پوچھنا چاہتے ہینکہ کیا اس سر سبز لانس میں ماہانہ جنرل بورڈ میٹنگ کے پہلے یا بعد میں “امراو جان” ادا کا مجرا بھی پیش کیا گیا تھا. یا پھر لانس کے کرائے کے لیے مختص کی گئی بھاری بھرکم رقم کی بھی بندر بانٹ کی گئی. مالیگاؤں عوامی پارٹی و رضوان بیٹری والا اور ذمہ داران اس ماہانہ جنرل بورڈ میٹنگ کے انعقاد کے لئے تمام ہی ذمہ داران کی مذمت کرتے ہوئے یہ کہنا چاہیں گے کہ کسی گندگی سے بھری ہوئی گٹر میں مسلم کارپوریٹرس اور میئر وغیرہ ڈوب کر اپنی جان دے دیں تاکہ ہمیں ان نا اہلوں سے چھٹکارا مل جائے اور آئندہ کے لئے ایسا کرنے والوں کو ایک سبق کبھی مل جائے.


error: Content is protected !!