Thursday, February 25, 2021
malegaontimes

سائزنگ معاملے کی سماعت بامبے ہائی کورٹ میں جمعہ تک ٹل گئی

مالیگاؤں (اسٹاف رپورٹر) نیشنل گرین ٹریبونل (NGT) مہاراشٹر پالیوشن کنٹرول بورڈ کی زد میں مالیگاؤں کارپوریشن کی کم و بیش 30 سائزنگیں ہیں۔ ایک سروے کے مطابق متذکرہ تمام سائزنگیں جنہیں یا تو سیل کیا گیا ہے یا سیل کرنے کی نوٹس دی گئی ہے اس پر سائزنگ مالکان کو اعتراض ہے۔ بعض سائزنگ مالکان نے قانونی ضابطے اور ہدایت کے مطابق عمل آوری مکمل طور پر کرلی ہے اس کے باوجود کاروائی کی تلوار لٹکی ہوئی ہے۔ اس سلسلے میں انصاف کے حصول کے لیے بامبے ہائی کورٹ میں سائزنگ مالکان کی جانب سے پٹیشن داخل کی گئی ہے۔ جس کی سماعت 23 جون کو ہونا تھی لیکن کسی باعث معزز عدالت نے اب 26 جون جمعہ تک کے لیے سماعت کو ملتوی کردیا ہے۔

ذرائع کے مطابق مالیگاؤں کارپوریشن حدود میں کاٹن چلانے والے کچھ کارخانہ دار کو کوالیٹی کے مطابق کچھ فائدہ نظر آرہا ہے۔ باقی کوالیٹی میں یا تو نفع ہے اور کچھ کوالیٹی میں نہ نفع نہ نقصان ہے۔ مجموعی طور پر سرخی کے آثار بھی بتائے جاتے ہیں جب کہ پالیسٹر والے 90 فیصد بنکر تشویش میں مبتلا ہیں۔ مالیگاؤں کے  بنکروں کی نمائندہ تنظیموں، سائزنگ مالکان کے نمائندے گزشتہ شب حسین سیٹھ گراؤنڈ کمپاؤنڈ میں اکٹھا بھی ہوئے۔ اس موضوع پر جمعہ کو بامبے ہائی کورٹ کی سماعت اور مالیگاؤں میونسپل کارپوریشن برسر اقتدار گروپ بالخصوص میئر طاہرہ شیخ اور سابق ایم ایل اے شیخ رشید کے اس بیان کہ ہم لوگ سائزنگ مالکان یا صنعت کے بچانے کے لیے خصوصی مہا سبھا بھی بھیج سکتے ہیں۔ واضح رہے کہ اس طرح کے بیان سے کچھ بنکر نمائندوں میں اطمینان پایا جارہا ہے۔ سابق ایم ایل اے آصف شیخ رشید نے بھی کچھ بنکر نمائندوں کے ساتھ سرکاری افسران سے ممبئی میں ملاقات کی۔ دیکھنا یہ ہے کہ آنے والے دنوں میں سائزنگ مالکان اور پاورلوم صنعت کو کس طرح سے راحت ملتی ہے۔

Ad:


free-home-delivery


error: Content is protected !!