Saturday, February 27, 2021
malegaontimes

سویس ہائی اسکول کے سابق طلباء کا اساتذہ کے اعزاز میں رکھا پروگرام کامیابی سے ہمکنار

آج پوری دنیا میں استاد کو عزت کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے مگر یہ زمانہ ہمارے معاشرے سے اساتذہ کی عزت و الفت کا عملی جوش و جذبہ معدوم ہوتا جا رہا ہے۔ طلباء اپنے اساتذہ کی بے ادبی کرتے ہیں اور ان کا مذاق بناتے ہیں جوکہ ایک افسوسناک پہلو اور معاشرے کیلئے خطرناک ہے۔اساتذہ کرام کی عزت افزائی کے مقصد سے سویس ہائی اسکول گروپ سن 2000ء بیچ (Batch)کے سابق طلباء نے ایک پروگرام کا انعقاد سویس ہائی اسکول میں کیا۔

حافظ اعجاز صاحب نے تلاوت قرآن مجید سے پروگرام کی شروعات کی اور محترم جاوید سر کی نظامت میں پروگرام شروع ہوا ۔ تحریک و تائیدِ صدارت عبدالاحد نے پیش کی اور اسکول کے صدر مدرس محترم رفیق انصاری سر کو صدر مجلس منتخب کیا گیا ۔صدر موصوف نے پروگرام کو چلانے کی اجازت مرحمت فرمائی۔ گروپ کے فعال رکن حافظ ریحان نے پروگرام کی غرض و غایت بیان کرتے ہوئے گروپ کی جانب سے کئے جانے والے فلاحی کاموں کا تذکرہ کیا اور اسکول کی ہر ممکن خدمت کیلئے تیار رہنے کا اظہار بھی کیا۔ اس کے بعد طلباء کی جانب سے یکے بعد دیگرے اسکول کے تمام اساتذہ کرام کی خدمت میں شال، پھول ،قلم اور مسواک دے کر اُن کا استقبال کیا ناظمِ مجلس محترم جاوید سر نے تمام اساتذہ کا تعارف کروایا اسی طرح تمام طلباء نے بھی اپنا تعارف پیش کیا ۔ طلباء کی جانب سے محمد نعیم نے اپنے تاثرات پیش کئے اور اساتذہ کرام کی خدمات و محنت پر تشکر کا اظہار کیا اس کے بعد محترم نفیس سر نے پروگرام کے انعقاد پر طلباء کا شکریہ ادا کیا اور طلباء کو نصیحتوں سے نوازا ۔ اسکول کے ہیڈ ماسٹر اور پروگرام کے صدر محترم رفیق انصاری سر نے اپنے صدارتی خطبہ میں اس منفرد پروگرام کے انعقاد کرنے پرگروپ کا شکریہ ادا کیا کہ طلباء نے ہمیں یاد رکھا اور فلاحی خدمات کی سراہنا کرتے ہوئے اپنی نیک تمناؤں کا اظہار کیا اور دعائیں دیں۔اس کے بعد کامیاب پروگرام کیلئے عملی جدوجہد کرنے پر حافظ ریحان، ندیم، عبدالاحد، عبدالباسط اور معین اختر کو اساتذہ کرام نے پھولوں کا نذرانہ پیش کیا آخر میں گروپ کے رکن حافظ و عالم عابد احمد نے شکریہ کی رسم ادا کرکے دعا کی اور پروگرام اپنے اختتام کو پہنچا۔

پروگرام میں گروپ کی جانب سے پرتکلف ضیافت کا اہتمام بھی کیا گیا تھا۔ اس تحریر کو لکھنے کا مقصد دوسروں یعنی آج کے طلبا کو ترغیب دینا ہے تاکہ وہ بھی اپنے اساتذہ کرام کو عزت بخشیں ، اپنے اساتذہ کے احسانوں کو یاد رکھیں اور ان کے لئے دعائے خیر کریں۔

تحریر بجانب: سویس ہائی اسکول سابق طلباء گروپ

error: Content is protected !!