Saturday, February 27, 2021
malegaontimes

اساتذہ کو 20 اور 40 فیصد گرانٹ ملنے کا وزیر تعلیم نے یقین دلایا مگر اساتذہ کا مطالبہ100 فیصد، احتجاج جاری

مہاراشٹر کے مختلف اضلاع سے اساتذہ کے ساتھ ساتھ معلمات کے وفود احتجاجی دھرنے میں شامل ہو رہے ہیں۔ اساتذہ کی تنظیم کا کہنا ہے کہ اساتذہ گھر بیٹھ کر گرانٹ کا انتظار نہ کریں، اپنے مطالابات کو منوانے کے لیے ممبئی کے آزاد میدان کے آکر احتجاج کریں اساتذہ کی تنظیم نے اعلان کیا تھا کہ سرکار 3 فروری تک مثبت فیصلہ لے کر غیر امداد یافتہ اساتذہ کو گرانٹ دینے کی راہ ہموار کرے۔

اس اعلان پر مہاراشٹر کی وزیر تعلیم ورشا گائیکواڑ 3 فروری کی شام کو ممبئی کے آزاد میدان ہو رہے احتجاج میں پہنچی تھیں۔ انہوں نے مظاہرین اساتذہ و معلمات سے احتجاج ختم کرنے کی گزارش کی۔اساتذہ نے مطالبہ کیا کہ جن اسکولوں کو اب تک گرانٹ نہیں دیا گیا ہے یا جن اسکولوں کو 20 فیصد گرانٹ دیا جا رہا ہے ان سبھی اسکولوں کو 100 فیصد گرانٹ دی جائے۔



تب وزیر تعلیم بے تیقن دیا کہ ہماری سرکار ٹیچر کو 20 فیصد اور 40 فیصد گرانٹ دے گی اور حکومت اپنی ذمہ دار نبھا رہی ہے۔وزیر تعلیم ورشا گائیکواڑ نے مظاہرین سے کہا کہ 15 دنوں کے اندر اندر ہم ہر ایک کو گرانٹ دینے کی کوشش کریں گے۔وہیں، احتجاج میں شامل کئی اساتذہ اور معلمات نے بیک آواز کہا کہ ہمیں 20 فیصد نہیں بلکہ 100 فیصد گرانٹ دی جائے۔اساتذہ نے کہا کہ آٹھ سالوں میں 36 واں دھرنا دیا جا رہا ہے۔ اس کے بعد بھی سرکار اساتذہ کے صبر کا امتحان لے رہی ہے۔

وزیر تعلیم ورشا گائیکواڑ نے کہا کہ ہم جلد از جلد گرانٹ کا مسئلہ حل کریں گے۔یہاں نیچرل گروتھ نان گرانٹ ‘ڈویژن شکشک کرتی سمیتی مہاراشٹر راجیہ’ کے ساتھ ساتھ نان گرانٹ اساتذہ کی تنظیموں کے مشترکہ اتحاد بنام ‘شکشک شمنوئے سنگھ’ کی سربراہی میں جاری احتجاج میں مہاراشٹر کے تمام نان گرانٹ اساتذہ نے اپیل کی ہے کہ وہ گھر بیٹھ کر گرانٹ کا انتظار نہ کریں۔ممبئی آزاد میدان پہنچ کر اپنا حق لینے کی کوشش کریں۔ تنظیم نے یہ بھی اپیل کی ہے کہ یہ لڑائی آخری مرحلہ تک جا پہنچی ہے اس لئے اساتذہ اپنے مطالبات کے لئے دھرنے میں شامل رہیں۔

mt ads

error: Content is protected !!