Thursday, February 25, 2021
malegaontimes

لاک ڈاؤن کے تعلق سے شرد پوار اور ادھو ٹھاکرے کی میٹنگ

ممبئی: مرکز ی حکومت نے    ” انلاکنگ ”  ( لاک ڈاؤن کے اگلے مرحلے ) کے  سلسلے میں  نئی گائیڈ لائن جاری کی  ہے اسکے جاری ہونے کے ایک گھنٹے بعد شرد پوار نے  وزیراعلیٰ ادھو ٹھاکرے  سے انکی  سرکاری رہائش گاہ ، ورشا  میں ملاقات کی اور مہاراشٹر کے موجودہ حالات کو دیکھتے ہوئے نئی حکمت عملی پر عمل کرنے کے متعلق تبادلہ خیال کیا۔ پوار اور  وزیراعلیٰ کی اس میٹنگ کو بہت اہم سمجھا جا رہا ہے۔ اور ایسی امید کی جا رہی ہیکہ مہاراشٹر حکومت ریاستی سطح پر لاک ڈاؤن میں مزید آسانیاں فراہم کرنے کی تیاری میں ہے۔

حالانکہ کچھ دنوں پہلے  وزیراعلیٰ نے کہا تھا کہ  وہ ممبئی اور پونے میں کوویڈ 19 کے کیسوں کی تعداد کو دیکھتے ہوئے لاک ڈاؤن اٹھانے کے حق میں نہیں ہیں لیکن نئی گائیڈ لائن جاری ہونے کے بعد انہوں نے کہا ہیکہ اس پر  عمل درآمد میں براہ راست ملوث چیف سکریٹری اجوئے مہتا اور سینئر بیوروکریٹس سے ملاقات کریں گے اور مرکزی وزارت داخلہ کے احکامات کو مدنظر رکھتے ہوئے مہاراشٹر میں نظر ثانی شدہ اصولوں پر عمل کریں گے۔

ٹھاکرے کی زیرقیادت حکومت کو بہت سارے معاملات طے کرنے ہیں،  کیا سینٹر کے نوٹیفکیشن کو مدنظر رکھتے ہوئے عبادت گاہوں ،  مالوں ،  دکانوں اور اداروں کو دوبارہ کھولنے کی اجازت دی جائے گی ؟  اور کیا شہری آمدورفت دوبارہ شروع ہوسکتی ہے؟  سماجی دوری کے خیال کو مدنظر رکھتے ہوئے اتوار کے روز ان امور پر فیصلہ لیا جائے گا۔

اسی کے تناظر میں  این سی پی کے ترجمان نواب ملک نے کہا ہیکہ ” این سی پی کو لگتا ہے کہ معاشی سرگرمیوں کو دوبارہ شروع کرنے کی ضرورت ہے۔   ہمیں لگتا ہے کہ طویل عرصے تک لاک ڈاؤن کے موجودہ قواعد کو جاری رکھنا غلط ہوگا۔  ہمیں لاک ڈاؤن اور معیشت کے مابین توازن قائم رکھنا پڑے گا۔”

شرد پوار نے  کچھ دن پہلے ہی ٹویٹ کیا تھا  کہ ” ریاستی حکومتیں لاک ڈاؤن کے حالات میں نرمی کر رہی ہیں،لیکن فیکٹریاں  دوبارہ  شروع  کرنے  کی پوزیشن میں نہیں تھیں کیونکہ کارکن دیہاتوں میں نقل مکانی کرچکے ہیں۔”   انہوں نے  مزید کہا تھا  کہ  “ہمیں ان کو واپس لانے کے لئے حکمت عملی تیار کرنے کی ضرورت ہے ،” لاک ڈاؤن نے ٹرانسپورٹ خدمات کو درہم برہم کردیا ہے۔  ہمیں ریاستوں میں روڈ ٹرانسپورٹ کو بتدریج  بحال کرنے اور ہوائی اور ریل خدمات کی بحالی کے لئے منصوبہ بندی کرنے کے لئے درست اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔


error: Content is protected !!